Turkey wants to put EU ties ‘back on track’

Turkey wants to put EU ties ‘back on track’

Turkish President Recep Tayyip Erdogan said Turkey wants to put EU ties ‘back on track'
Turkish President Recep Tayyip Erdogan said Turkey wants to put EU ties ‘back on track’

Turkish President Recep Tayyip Erdogan said in his Tuesday interview that he wanted peace between Turkey and the European Union and also turkey was hoping for the same goodwill and wishes from the other 27 counties block. Erdogan commenced a policy for the eastern Mediterranean as well as Libya and parts of the Middle East .but this policy was followed a year after which makes a complex relationship, especially with Greece and European power France as well. In the presidential compound of Ankara, Tayyab Erdogan took a soft tune for meeting with the EU ambassador in Television and said that we are ready to get our relationship back on track.

Now turkey is expecting that we hope our European friends will show the same goodwill. In Istanbul, on January 25 Turkey and Greece agreed to solve their long-time border dispute. This exploratory talk meeting between the two uneasy border conflict neighbors is the first talk after the sixteen unsuccessful rounds stretching  14 years in 2016. Erdogan said that that talk will provide benefits to the new era. he also said that he wanted a good relationship with Paris after a month of personal conflict with the president of french  Emmanuel Macron.

Turkish President Recep Tayyip Erdogan said Turkey wants to put EU ties ‘back on track’

Erdogan said Turkey wants to save its relationship with Paris and protect it from any more conflicts. In Istanbul, on January 25 Turkey and Greece agreed to solve their long-time border dispute. This exploratory talk meeting between the two uneasy border conflict neighbors is the first talk after the sixteen unsuccessful rounds stretching  14 years in 2016. Erdogan said that that talk will provide benefits to the new era. Erdogan said Turkey wants to save its relationship with Paris and protect it from any more conflicts. In Istanbul, on January 25 Turkey and Greece agreed to solve their long-time border dispute. This meeting with the president has the same point as with the meeting of Turkish foreign minister Mevlut Cavusoglu and EU envoys held on Monday.

Turkey is determined to take a good step with EU accession Cavusoglu said to ambassadors. Because it is also a part of Europe and Europe is our destiny. After years of conflict Turkish leaders hope for progress In a relationship with the EU and they also hope from other EU countries take the same steps this year. Since 2005 Turkey holds the membership of EU accession but the progress between the relationships with the EU bloc is not made. Cavusoglu also talked about the role of the country’s larger in the security of Syria, Libya, the Caucasus, Balkans, the Middle East, and the Black Sea regions.

Read More : Dirilis Ertugrul Actress Esra Bilgic aka Halima Sultan Dance Video goes Viral

ترکی یورپی یونین کے تعلقات کو ‘دوبارہ سے راستے پر لانا’ چاہتا ہے۔

ترک صدر رجب طیب اردگان نے اپنے منگل کے انٹرویو میں کہا تھا کہ وہ ترکی اور یوروپی یونین کے مابین امن چاہتے ہیں اور ترکی بھی اسی خیر سگالی کی امید کر رہا ہے اور دیگر 27 کاؤنٹیوں کے بلاک سے بھی خواہش کا اظہار کررہا ہے۔ اردگان نے مشرقی بحیرہ روم کے ساتھ ساتھ لیبیا اور مشرق وسطی کے کچھ حصوں کے لئے بھی ایک پالیسی کا آغاز کیا تھا .لیکن اس پالیسی کے بعد ایک سال عمل کیا گیا جس کے بعد خاص طور پر یونان اور یورپی طاقت فرانس کے ساتھ بھی اس سے پیچیدہ تعلقات پیدا ہوگئے۔ انقرہ کے صدارتی احاطے میں ، طیب اردگان نے ٹیلی ویژن میں یورپی یونین کے سفیر سے ملاقات کے لئے نرمی اختیار کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنے تعلقات کو پٹری پر واپس لانے کے لئے تیار ہیں۔

اب ترکی یہ توقع کر رہا ہے کہ ہمیں امید ہے کہ ہمارے یوروپی دوست بھی اسی خیر سگالی کا مظاہرہ کریں گے۔ استنبول میں ، 25 جنوری کو ترکی اور یونان نے اپنے دیرینہ سرحدی تنازعہ کو حل کرنے پر اتفاق کیا۔ دونوں بے چین سرحدی تنازعات کے پڑوسیوں کے مابین ہونے والی یہ تحقیقاتی گفتگو ، سنہ 2016 میں چودہ سال تک جاری رہنے والے سولہ ناکام راؤنڈ کے بعد پہلی گفتگو ہے۔ اردگان نے کہا کہ اس گفتگو سے نئے دور کو فوائد حاصل ہوں گے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کے ساتھ ایک ماہ کے ذاتی تنازعہ کے بعد پیرس کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہیں۔

ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے کہا کہ ترکی یورپی یونین کے تعلقات کو ‘پس پشت ڈالنا’ چاہتا ہے

اردگان نے کہا کہ ترکی پیرس کے ساتھ اپنے تعلقات کو بچانا اور اسے کسی اور تنازعات سے بچانا چاہتا ہے۔ استنبول میں ، 25 جنوری کو ترکی اور یونان نے اپنے دیرینہ سرحدی تنازعہ کو حل کرنے پر اتفاق کیا۔ دونوں بے چین سرحدی تنازعات کے پڑوسیوں کے مابین ہونے والی یہ تحقیقاتی گفتگو ، سنہ 2016 میں چودہ سال تک جاری رہنے والے سولہ ناکام راؤنڈ کے بعد پہلی گفتگو ہے۔ اردگان نے کہا کہ اس گفتگو سے نئے دور کو فوائد حاصل ہوں گے۔

اردگان نے کہا کہ ترکی پیرس کے ساتھ اپنے تعلقات کو بچانا اور اسے کسی اور تنازعات سے بچانا چاہتا ہے۔ استنبول میں ، 25 جنوری کو ترکی اور یونان نے اپنے دیرینہ سرحدی تنازعہ کو حل کرنے پر اتفاق کیا۔ صدر کے ساتھ اس ملاقات کا بھی وہی نکتہ ہے جس میں پیر کے روز ترکی کے وزیر خارجہ میلوت کیوسوگلو اور یورپی یونین کے سفیروں کی ملاقات بھی تھی۔

ترکی نے سفیروں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یورپی یونین سے الحاق کیوسوگلو کے ساتھ ترکی ایک اچھا قدم اٹھانے کے لئے پرعزم ہے۔ کیونکہ یہ یورپ کا بھی ایک حصہ ہے اور یورپ ہی ہمارا مقدر ہے۔ کئی سالوں کی کشمکش کے بعد ترکی کے رہنماؤں نے یورپی یونین کے ساتھ تعلقات میں ترقی کی امید کی ہے اور وہ دیگر یورپی یونین کے ممالک سے بھی امید کرتے ہیں کہ اس سال بھی وہی اقدامات کریں گے۔ 2005 کے بعد سے ترکی میں یوروپی یونین کے الحاق کی رکنیت حاصل ہے لیکن یورپی یونین کے بلاک کے ساتھ تعلقات کے مابین پیشرفت نہیں ہو سکی ہے۔ کیوسوگلو نے شام ، لیبیا ، قفقاز ، بلقان ، مشرق وسطی اور بحیرہ اسود کے خطے کی سلامتی میں ملک کے بڑے کردار کے بارے میں بھی بات کی۔

admin

Welcome in our blog We create this blog for teaching purpose. We provide knowledge about different things which are related to online category or any other necessary for life journey.

One thought on “Turkey wants to put EU ties ‘back on track’

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *